34

میری یوں دعائیں قبول کر میرے لب پہ کوئی دعا نہ ہو

تیرے اختیار میں کیا نہیں مجھے اس طرح سے نوازدے
میری یوں دعائیں قبول کر میرے لب پہ کوئی دعا نہ ہو

یارب میرے دل کا تو نور بن جا
قبول کر دعا اور سرور بن جا

تیری ہی محبت کے گن ہمیشہ گائے
ہاتھ پاؤں قلم سے جدھر کو جائے

میرے اک اک اعضاء کو دے ایسا دیا
یارب ضائع نہ ہوعمل جو بھی کیا

ہاتھ پاؤں قلم کا تو نور بن جا
قبول کر دعا اور عمل سرور بن جا

لب ہمیشہ ہلتے رہے تیرے زکر کو
حمدوثنا لکھنے کی ہمیشہ فکر ہو

ہاتھوں کی لکیروں میں موجود اے خدا
دور ہمشہ رکھنا ہم سے شیطانی ہر ادا

ہاتھوں کی لکیروں کا تو نور بن جا
قبول کر دعا اور سرور بن جا

یارب میرے دل کا تومحبوب بن جا
قبول کر دعا اور غرور بن جا

میری یوں دعائیں قبول کر میرے لب پہ کوئی دعا نہ ہو

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں