50

نئی حلقہ بندیاں ، لاہور کے کل کتنے حلقے ہیں اور کونسا علاقہ کس حلقے میں ہے؟ وہ تفصیلات جو آپ کو ضرور معلوم ہونی چاہیں

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) 2017 میں ہونے والی چھٹی مردم شماری کے بعد ملک بھر میں نئی حلقہ بندیوں کا کام مکمل کرلیا گیا ہے۔ حالیہ مردم شماری کے بعد ہونے والی نئی حلقہ بندیوں کے بعد بہت سے حلقوں میں تبدیلیاں واقع ہوئیں جبکہ پنجاب کا دارالحکومت لاہور بھی ان تبدیلیوں سے محفوظ نہیں رہا ، ذیل میں ہم زندہ دلان لاہور کی سہولت کیلئے میٹروپولیٹن شہر میں ہونے والی نئی حلقہ بندیوں کی تفصیل دے رہے ہیں تاکہ ووٹرز باآسانی اپنے نئے حلقوں کو سمجھ سکیں۔

این اے 123

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 118 کو نئی حلقہ بندیوں کے بعد این اے 123 کا نام دیا گیا ہے۔ اس میں شاہدرہ، سگیاں، ٹمبر مارکیٹ ، سبزی منڈی، گجر محلہ، نارووال روڈ، عباس نگر، محلہ پری محل، کھوکھر پنڈ، فرخ آباد، بیگم کوٹ ، لالہ زارکالونی، شمس آباد، ماچس فیکٹری ، اسلام نگر، سوئی گیس روڈ، مین بازار سگیاں، قلعہ محمدی اور شمس پورہ شامل ہیں۔

این اے 124

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 119 کو این اے 124 کا نام دیا گیا ہے۔ اس حلقے میں بادامی باغ، والڈ سٹی ، شاہ باغ، مصری شاہ ، ریلوے سٹیشن، قلعہ گجر سنگھ، لکشمی چوک، گوالمنڈی، ریلوے روڈ، کچی آبادی بادامی باغ، عثمان گنج شیرانوالہ گیٹ ، گمٹی بازار، رنگ محل اور اندرون لوہاری گیٹ شامل ہیں۔

این اے 125

این اے 120 کو این اے 125 میں تبدیل کردیا گیا ہے جس میں ریواز گارڈن، اسلام پورہ، سنت نگر، ساندہ روڈ، موہنی روڈ، مزنگ ، وارث روڈ، گنگا رام، کچا جیل روڈ، جی او آر ون، دھوبی منڈی، مزنگ اڈااور گلشن راوی شامل ہیں۔

این اے 126

نئی حلقہ بندیوں کے بعد این اے 121 اب این اے 126 بن گیا ہے جس میں سمن آباد، سوڈیوال، نواکوٹ، شیراکوٹ، بابو صابو، یتیم خانہ، چوبرجی پارک، سبزہ زار سکیم، اسلامیہ پارک، نیو مزنگ ، گلشن راوی، جی آو آر ٹو، بہاولپور روڈ، رستم پارک، مہاجر آباد اور سوڈیوال پنڈ شامل ہیں۔

این اے 127

اس حلقے میں باغبانپورہ، کوٹ خواجہ سعید، چائنہ سکیم، محمود بوٹی، یو ای ٹی ، مجاہدآباد، گنج مغلپورہ، درس بڑے میاں، پاکستان منٹ، سنگھ پورہ ، جمیلہ آباد، ریلوے پاور ہاﺅس، باجا لائن، نشاط پارک شامل ہیں۔ پہلے یہ این اے 123 تھا جسے اب این اے 127 کردیا گیا ہے۔

این اے 128

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 124 کا نام بدل کر اسے این اے 128 کردیا گیا ہے جس میں کرول پنڈ، بھسین، لکھوڈیر، دھوبی گھاٹ، داروغہ والا، فتح گڑھ، حمید پور، سراج پورہ، فاروق آباد، مانانوالہ فہد ٹاﺅن، مانانوالہ علی ٹاﺅن، رکھ چھبیل گوپال ڈہرہ، میجر محمد آصف، چک رام پورہ احسان ٹاﺅن، ہندوگجر اور مسجد بوہڑ والی شامل ہیں۔

این اے 129

این اے 125 اب این اے 129 بن چکا ہے جس میں میو گارڈن، میاں میر پنڈ، جم خانہ، مغل پورہ ، ڈرائی پورٹ، شامی روڈ، لال پل ، تاج باغ، سردار کینٹ غازی آباد، گڑھی شاہو، کینال بینک، دھرم پورہ، باجا لائن، تاج پورہ، تاج باغ، الطاف کالونی، ہربنس پورہ، مصطفیٰ آباد، پرانا دھرم پورہ، دھوبی گھاٹ اور عسکری فیز 10، 9 اور ایک شامل ہیں۔

این اے 130

نئی حلقہ بندیوں کے تحت لاہور کا حلقہ این اے 126 اب این اے 130 بن چکا ہے جس میں گلبرگ، ماڈل ٹاﺅن، پیکو روڈ، گارڈن ٹاﺅن ، اقبال ٹاﺅن، وحدت روڈ ، اچھرہ، شادمان، فردوس مارکیٹ، سمن آباد، کلمہ چوک، اولڈ ایئر پورٹ، عسکری 5 فلیٹس، ماڈل ٹاﺅن ایکسٹینشن شامل ہیں۔

این اے 132

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 132 میں برکی حیدرا، پنگالی، میر جاہمن، جلو، ڈی ایچ اے فیز 8، کاہنہ 9، کمیٹی کاہنہ، بھٹہ چوک، بیدیاں روڈ، گجومتہ، جھلکے، گاگا، روڈاں والا اور ہیر شامل ہیں۔ پہلے یہ حلقہ این اے 130 کہلاتا تھا۔

این اے 133

لاہور کے علاقے کوٹ لکھپت، دلکش کالونی، اتفاق فیکٹری، مولانا شوکت علی روڈ، باگڑیاں روڈ، گرین ٹاﺅن ،لیاقت آباد، قینچی چونگی، ٹاﺅن شپ جوہر ٹاﺅن اور وفاقی کالونی پر مشتمل حلقے کو این اے 133 کانام دیا گیا ہے ، پہلے یہ حلقہ این اے 127 کہلاتا تھا۔

این اے 134

کاہنہ نو ، باگڑیاں، دھرم پورہ، راکھ چندربابا، کچا جیل روڈ، اتحاد پارک، ستارہ کالونی، پاک ٹاﺅن، کماہاں روڈ، سادھوکی (ویلنشیا ٹاﺅن)، کچہ، کماہاں، محمد علی کالونی، گلشن یاسین کالونی اور المعراج کالونی کے رہائشی این اے 134 میں ووٹ کاسٹ کریں گے، پہلے یہ علاقہ این اے 129 کے نام سے موسوم تھا۔

این اے 135

لاہور کے ذیل میں دیے گئے علاقے این اے 135 کا حصہ ہوں گے، پہلے یہ حلقہ این اے 128 تھا۔
ٹھوکر نیاز بیگ، اعوان ٹاﺅن، رائیونڈ تحصیل، رکھ کھمبا، کاہنہ نو، خوشحال پارک، جلال پارک، حسن ٹاﺅن ، کھاڑک نالہ، علامہ اقبال ٹاﺅن، مرغزار کالونی، مہر پورہ، مصطفیٰ آباد، رانا ٹاﺅن، ہنجروال۔

این اے 136

این اے 128 اب نئی حلقہ بندیوں کے بعد این اے 136 بن چکا ہے، اس میں چوہنگ، مانگا منڈی، مراکہ، پجیال، رائیونڈ شہر، نوازش آباد، موہلنوال، بھائی کوٹ، مانگا اتر، شامکے بھٹیاں، علی حسین آباد، مدینہ سکول، بابا زندہ پور، موہنی وال اور پنجاب ہاﺅسنگ اتھارٹی شامل ہیں۔ 2013 کے انتخابات میں اس حلقے کو 128 کا نمبر دیا گیا تھا۔

نیا حلقہ ، این اے 131

قارئین حیران ہورہے ہوں گے کہ ہم این اے 130 کے بعد ڈائریکٹ 132 پر کیسے پہنچ گئے اور این اے 131 کدھر گیا تو جناب یہ رہیں این اے 131 کی بھی تفصیلات ۔ اصل میں چھٹی مردم شماری کے بعد لاہور میں حلقہ این اے 131 کا اضافہ ہوا ہے اس لیے اسے واضح کرنے کیلئے ترتیب سے ہٹ کر بیان کیا جارہا ہے تاکہ لوگ بہتر طور پر اس نئے حلقے سے واقف ہوسکیں۔ این اے 131 میں آر اے بازار، نشاط کالونی، کیولری، والٹن، ڈیفنس (ڈی ایچ اے) کماہاں، بیدیاں روڈ، ایئر پورٹ، علی پارک نادر آباد، عارف آباد، چنگ خورد بیدیان، بھٹہ چوک، غوثیہ پارک، شوکت ٹاﺅن، محمد پورہ اور چونگی امر سدھو شامل ہیں۔

Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں